بچوں کے تحفظ کی کتاب

لاہور: پنجاب حکومت نے بچوں کے تحفظ کے عالمی دن پر نصاب میں نئی کتاب متعارف کرادی جس میں بچوں کو اپنے بچاؤ کی تدابیر سکھائی گئی ہیں۔
اسکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے مرتب کردہ کتاب کا نام ’’محفوظ بچے مضبوط پاکستان‘‘ ہے۔ کتاب میں بچوں کو آگاہی فراہم کی گئی ہے کہ انہوں نے اسکول جاتے ہوئے کس طرح محفوظ رہنا ہے۔ یہ کتابچہ 10 سال تک کی عمر کے بچوں کے نصاب میں اساتذہ، والدین اور بچوں کے لیے مناسب ہدایات کی شمولیت کے لیے علما کرام کو آن بورڈ لے کر تیار کیا گیا ہے.

کتاب میں بتایا گیا کہ بچے اکیلے میں کسی اجنبی کے ساتھ نہ جائیں. ہمیشہ اپنے والدین کے ساتھ ہی کہیں‌ جائیں اور کسی غیر سے کوئی بھی چیز لے کر نہ کھائیں. اگر کوئی شخص بچوں کو اپنے ساتھ جانے کی کوشش کرے یا ان کے ساتھ کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش آئے تو اس کے بارے میں وہ اپنے والدین کو بتائیں۔
بچوں کو بتایا گیا کہ وہ اپنی حفاظت خود بھی کر سکتے ہیں. کسی بھی خطرے کی صورت میں آس پاس لوگوں کی توجہ حاصل کرنے کے لیے شور مچائیں اور مدد حاصل کریں۔ نصاب میں بچوں کے والدین کو بھی ان کی ذمہ داریوں کے بارے میں آگاہ کرتے ہوئے کہا گیا کہ والدین بچوں کو بتائیں کہ وہ ان کے بہترین دوست ہیں، اپنے بچوں کی سرگرمیوں پر نظر رکھیں. بچوں کو بتایا جائے کہ وہ اپنے جسم کو کسی کو چھونے نہ دیں. گھبراہٹ کی صورت میں والدین اور استاد کو آگاہ کریں۔ جدید نصاب تعلیم میں اساتذہ کو بھی ان کے کردار کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔
بچوں کے تحفظ کا عالمی دن منانے کا مقصد عوام میں بچوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے آگہی پیدا کرنا ہے۔ بچے کے ساتھ کوئی کسی قسم کا تشدد، زیادتی اور غلط رویہ اختیار کرتا ہے تو چائلڈ پروٹیکشن اینڈ ویلفیئر بیورو کے نمبر 1121 یا پولیس کے 15 نمبر پر رابطہ کیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں