پانی – روبینہ ممتاز روبی

زندگی کے جو چار ہیں element
گرچہ سب ہی بہت ہیں important

ایک جز اس کا پر جو ”پانی‘‘ ہے
اہمیت اس کی سب نے مانی ہے

کون سی جا نہیں ہے یہ موجود
آ سماں تا زمیں ہے اس کا وجود

فوڈ سے ہے قریبی relation
کیوں کہ ہے helpful in digestion

پروٹوپلازم کا major component
کام اس کا بہت ہے important

ہے رواں خوں بہ جسمِ انسانی
اس کا بھی ذمہ دار ہے پانی

تم جو لیتے ہو بارشوں کا مزہ
جان لو اس کی اہمیت بھی ذرا

سب سے خالص شکل ہے پانی کی
کتنے بیماروں کو شفا بخشی

گو ہے خطرہ یہ صورتِ سیلاب
اس میں جیتی ہے پر حیاتِ آ ب

یہ ہے اک ذریعہء تجارت بھی
یہ ہے ذریعہء سیر و سیاحت بھی

تیرتی برف کیوں ہے پانی پر
غور تھوڑا کرو اگر اس پر

آ نسر اس کا سیدھا سادہ ہے
پانی کی density زیادہ ہے

یہ بھی ہے اک کرشمہ پانی کا
اس سے ہوتی ہے برقی رو پیدا

پھر بھی دن رات کرکے اس کا زیاں
کر رہے ہیں ہم اپنا ہی نقصاں

لمحہ بھر کے لیے جو سوچو تم
پانی کو بے سبب نہ پھینکو تم

قدر کرتے ہیں نعمتوں کی وہی
جن کو نعمت کوئی ملی نہ کبھی

پانی کی اہمیت کو جانو تم
بات میری ذرا جو مانو تم

قدر اس نعمتِ خدا کی کرو
ضائع اس کو یوں بے وجہ نہ کرو


روبینہ ممتاز روبی ایک ممتاز شاعرہ ہیں اور مختلف ادبی تنظیمات سے وابستہ ہیں. آپ بنیادی طور پر شعبہ حیاتیات کی معلمہ ہیں. علاوہ ازیں مختلف ادبی رسائل و میگزینوں سے بھی وابستہ ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں